کینیڈا میں ہتھیار رکھنے پر پاکستانی گرفتار

کینیڈا نے ایک پاکستانی کو دہشت گردی کے ممکنہ خطرے‘ کے تحت گرفتار کر لیا ہے۔ اس پر آتشیں اسلحہ رکھنے اور سوشل میڈیا پر انتہا پسندی پر مبنی خیالات کے اظہار کا الزام بھی عائد کیا گیا ہے۔

0,,17985716_303,00

تیس سالہ سافٹ ویئر ڈیزائنر محمد عقیق انصاری کے وکیل انصر فاروق نے جمعرات کو بتایا کہ ان کے مؤکل کو پیر کو گرفتار کیا گیا تھا۔ اس پر الزام ہے کہ اس کے پاکستان میں شدت پسندوں کے ساتھ روابط ہیں۔

اس گرفتاری کا اعلان ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے جب حال ہی میں حملوں کے نتیجے میں کینیڈا کے دو فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔ فاروق کے مطابق انصاری پر آتشیں اسلحہ رکھنے کے ساتھ ساتھ یہ الزام بھی ہے کہ وہ سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر انتہا پسندی پر مبنی نظریات کا اظہار کر چکا ہے۔

انصاری کینیڈا میں رہائش پذیر ہے تاہم اس کے پاس وہاں کی شہریت نہیں ہے۔ فاروق کا کہنا ہے کہ اس پر کینیڈا کے ایمیگریشن اینڈ ریفیوجی پروٹیکشن ایکٹ کے تحت مقدمہ قائم کیا گیا ہے اور اسے ملک کی سلامتی کے لیے خطرہ قرار دیا گیا ہے

0,,17985716_303,00

گزشتہ دِنوں اٹاوہ میں ایک حملہ آور نے ایک فوجی کو ہلاک کر دیا تھا

انصر فاروق دہشت گردی سے متعلقہ الزامات کا سامنے کرنے والے دیگر افراد کا بھی دفاع کر چکے ہیں۔ خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق ان کا کہنا ہے کہ اوٹاوا اور کیوبک میں مختلف حملوں کے نتیجے میں دو فوجیوں کی ہلاکت کے بعد متعدد لوگوں نے انہیں ٹیلی فون کالز کیں ہیں اور بتایا ہے کہ پولیس اور انٹیلیجنس اہلکار ان سے رابطہ کر رہے ہیں۔

رائل کینیڈیئن ماؤنٹڈ پولیس (آر سی ایم پی) نے اس گرفتاری پر بیان دینے سے انکار کیا ہے۔ مقامی اخباروں ’دی گلوب‘ اور ’میل‘ نے سب سے پہلے انصاری کی گرفتاری کی خبر دی تھی۔

فاروق کا کہنا ہے: لوگ خوفزدہ ہیں۔ جب سے حملے ہوئے ہیں، آر سی ایم پی کی بھاری نفری دیکھی جا رہی ہے۔

انصاری کو مِلٹن میں میپلہرسٹ کوریکشنل کمپلیکس میں رکھا گیا ہے۔ وہاں ایک اہلکار نے بتایا کہ اس کے خلاف جمعے کو وہیں مقدمے کی سماعت ہو گی۔

انصاری نے گزشتہ برس دس ہتھیار حکام کے حوالے کیے تھے جن میں رائفلز اور متعدد ہینڈگنز شامل تھیں۔ اس کا مقصد قانونی طور پر حاصل کیے گئے ہتھیاروں کے غیر قانونی ذخیرے کے الزامات سے بری ہونا تھا۔

اُس مقدمے میں انصاری کی پیروی کرنے والے وکیل ایڈ برلیو کے مطابق اس وقت اس پر دہشت گردی کے الزامات عائد نہیں کیے گئے تھے۔ برلیو نے کہا: مجھے حیرت ہے کہ اب اسے ایمیگریشن کے الزامات کا سامنا ہے۔ گزشتہ برس عائد کیے گئے الزامات میں کبھی تشدد، ممکنہ تشدد کی بات نہیں ہوئی تھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ انصاری ایک نرم مزاج اور غیر دلچسپ شخص ہے جسے بندوقیں پسند ہیں۔

 

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*