ملالہ یوسف زئی نے نوبل امن انعام جیت لیا۔

news, latest news, online news, malala
ناروے کی نوبل کمیٹی نے امن انعام برائے 2014 کا اعلان پاکستانی طالبہ ملالہ یوسف زئی اور انسانی حقوق کے بھارتی کارکن کیلاش سیتارتھی کو دینے کا اعلان کیا ہے۔ اندونوں افراد کو یہ انعام بچوں کے حقوق کے لیے کوششوں پر دیا۔
اس انعام کا اعلان کرتے ہوئے ناروے کی نوبل کمیٹی کا کہنا تھا، ’بچوں اور نوجوانوں کے حقوق کی پامالیوں کے خلاف جدوجہد کا اعتراف کرتے ہوئے نوبل امن انعام برائے 2014 کیلاش سیتارتھی اور ملالہ یوسف زئی کو دیا جاتا ہے۔ بچوں کو ہر حال میں اسکول جانا چاہیے اور انہیں مالی جبریت سے بھی آزادی ملنا چاہیے۔ غریب ممالک کی آبادی کا 60 فیصد 25 برس سے کم عمر افراد پر مشتمل ہے۔ تنازعات کے شکار ممالک میں خصوصا بچوں کے حقوق کی پامالی ایک نسل سے دوسری نسل تک منتقل ہوتی چلی جا رہی ہے۔‘
پاکستان کی وادیء سوات سے تعلق رکھنے والی 17 سالہ ملالہ یوسف زئی نے لڑکیوں کی تعلیم کے حق میں آواز بلند کرنا اس وقت شروع کی، جب سوات پر شدت پسند اسلامی گروہ طالبان کا کنٹرول تھا۔ تاہم عسکریت پسندوں کا خوف ملالہ کی آواز کو دبا نہ پایا۔ انہوں نے ایک بین الاقوامی نشریاتی ادارے کے لیے اپنی ڈائری تحریر کرنا شروع کی، جس میں وہ طالبان کی جانب سے لڑکیوں کے تعلیمی مراکز اور اسکولوں کو بموں سے اڑانے اور انہیں تعلیم کے بنیادی حق سے محروم کرنے کے واقعات کو موضوع بنایا کرتی تھیں۔
دو برس قبل اسی پاداش میں طالبان نے ملالہ یوسف زئی کو ایک حملے میں سر پر گولی مار دی، تاہم وہ معجزاتی طور پر بچ گئیں۔ اس کے بعد نہ صرف عالمی سطح پر ان کی آواز اور بھی واضح انداز میں سنی جانے لگی بلکہ وہ لڑکیوں کے تعلیم کے حق کے حوالے سے عالمی سطح پر ایک علامت کے طور پر دیکھی جانے لگیں۔ ملالہ کو اس سے قبل متعدد اہم عالمی انعامات و اعزازات نوازا جا چکا ہے، تاہم نوبل امن انعام اس سلسلے میں عالمی سطح پر ملالہ کی کوششوں کا سب سے بڑا اعتراف ہے۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*