دودھ والی چائے فربہی کا ایک سبب

1687223712teawithmilk

ایک تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ چائے میں دودھ کے اضافے سے اس کی سب سے اہم خاصیت یعنی وزن میں کمی کرنے کی صلاحیت ختم ہو جاتی ہے

چین سے چائے لا کر انگریزوں نے اس کی کاشت برصغیر میں متعارف کروائی چونکہ دودھ بھی بہت تھا اور شکر بھی ڈھیروں فراہم تھی لہٰذا انھوں نے چائے میں ان دونوں کا اضافہ کیا ۔ دودھ اور چینی کی آمیزش سے چائے مزے دار ہوئی لیکن صحت کے لئے اس کی افادیت یقینا گھٹ گئی۔
چائے میں دودھ کے اضافے سے اس کی سب سے اہم خاصیت، یعنی وزن میں کمی کرنے کی صلاحیت ختم ہو جاتی ہے۔ یہ بات سیاہ چائے کے گھر ہندستان میں جورہٹ میں واقع چائے کی ریسرچ ایسوسی ایشن کی جانب سے تسلیم کرلی گئی ہے۔ اس کے سائنس دان ڈاکٹر دیوجیت بورٹھا کر کے مطابق ہم جب بھی اچھی بھلی صحت بخش چائے میں دودھ شامل کرتے ہیں تو اس کی وزن کم کرنے کی صلاحیت ختم ہو جاتی ہے۔
چائے میں جو مرکبات دریافت ہوئے ہیں، ان میں آنتوں میں غذا میں شامل چکنائیوں کے جذب ہونے کی مقدار میں کمی کرنے والے مرکبات قابل ذکر ہیں۔ روغنیات کے جذب ہونے کے عمل میں اسی کمی کی وجہ سے خون میں کولیسٹرول کی سطح کم رہتی ہے۔ چائے کے یہ مرکبات فلاون اور آروبجن کہلاتے ہیں ۔ انھیں مجموعی طور پر پولی فینول کہا جاتا ہے۔
یہ درست ہے کہ دودھ اور شکر کے بغیر تیار ہونے والی چائے پینے سے جو سلیمانی چائے بھی کہلاتی ہے وزن کم ہوتا ہے لیکن اس میں دودھ کے شامل ہونے کے بعد چکنائی کا مقابلہ کرنے والی خاصیت ختم ہو جاتی ہے۔ اس سلسلے میں میں چوہوں پر ہونے والی تحقیق سے ثابت ہو ا ہے کہ چوہوں کو روغنی غذا کھلانے کے باوجود سادہ چائے پلانے سے مٹاپا لاحق نہیں ہوتا۔
تحقیق کاروں کو اب یقین ہو گیا ہے کہ دنیا کی سب سے زیادہ چائے پینے والی قوم یعنی انگریز چائے میں شکر اور دودھ کا اضافہ کرنے کی وجہ سے موٹے ہیں۔
ڈاکٹر بورٹھا کر اور ان کی ریسرچ ٹیم کے مطابق چائے میں دودھ کے شامل ہونے سے اس کی پروٹین چکنائی کم کرنے والے مرکبات کو بے اثر کر دیتی ہے۔ اس طرح چائے پینے والے اس میں شامل دودھ کے پروٹین کی وجہ سے اس کے فائدوں سے محروم ہو جاتے ہیں ، اس لیے چائے دودھ شامل کیے بغیر ہی پینا چاہیے۔
اس سلسلے میں یہاں ہونے والی تحقیق سے یہ بھی ثابت ہو ا ہے کہ چوہوں کی عام چائے کی کم مقدار پلانے سے ان میں کولیسٹرول کی مقدار کے علاہ ان کے خون میں شحمی تیزاب کی سطح بھی کم ہو جاتی ہے۔

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*